Post Tagged with: "Labor Movement"

واپڈا کی نجکاری کے خلاف ہائیڈرو یونین کا ملک گیر احتجاج

واپڈا کی نجکاری کے خلاف ہائیڈرو یونین کا ملک گیر احتجاج

|رپورٹ: ریڈ ورکرز فرنٹ| آج 3 اکتوبر 2019ء پورے پاکستان میں واپڈا ہائیڈرو یونین کی کال پر اعلان کردہ نجکاری کے خلاف تمام واپڈا کمپنیوں کے ہیڈ اور سرکل آفس میں بھرپور ریلیاں اور دھرنے کئے گئے۔ ان سرگرمیوں میں مقامی قیادت اور مزدوروں نے کھل کر IMF اور حکومت […]

October 3, 2019 ×
اداریہ لال سلام: گہرا سکوت اور انقلابی طوفان

اداریہ لال سلام: گہرا سکوت اور انقلابی طوفان

  سطح پر اس وقت گہرا سکوت دکھائی دیتا ہے۔ پورے ملک میں بد ترین مہنگائی، بیروزگاری، لاعلاجی، ناخواندنگی اور طاقتوروں کا کمزوروں پرظلم و ستم اپنی انتہاؤں کو چھو رہا ہے لیکن سیاسی میدان میں عوام کی شمولیت کہیں بھی نظر نہیں آتی۔ امیر اور غریب کی خلیج تمام […]

September 30, 2019 ×
ہانگ کانگ: ملزمان کی حوالگی کا بل واپس‘ طبقاتی جدوجہد جاری رکھنا ہوگی!

ہانگ کانگ: ملزمان کی حوالگی کا بل واپس‘ طبقاتی جدوجہد جاری رکھنا ہوگی!

|تحریر: ڈینئیل مورلے و پارسن ینگ، ترجمہ: اختر منیر|   ہانگ کانگ کی عوامی تحریک نے اپنا بنیادی مطالبہ حاصل کرلیا ہے جو ملزمان کی حوالگی کے قانون کی واپسی تھا جس کے تحت بیجنگ حکومت جسے چاہتی شک کی بنیاد پر اپنی تحویل میں لے سکتی تھی۔ لیکن پولیس […]

September 11, 2019 ×
بلوچستان: مزدور طبقے پر پابندیاں اور آئندہ کا لائحہ عمل

بلوچستان: مزدور طبقے پر پابندیاں اور آئندہ کا لائحہ عمل

|تحریر: زلمی پاسون| 27 جون کو بلوچستان ہائیکورٹ نے یونینز کے آپسی آئینی اختیارات کے کیس کے سلسلے میں ایک متنازعہ فیصلہ سُناتے ہوئے بلوچستان بھر کی 62 ٹریڈ یونینز پر پابندی عائد کردی اور ان 62ٹریڈ یونینز کی رجسٹریشن منسوخ کرنے کے لیے رجسٹرار کو مخاطب کرتے ہوئے لکھا […]

August 30, 2019 ×
کوئٹہ: بلوچستان بھر میں یونینز کو غیر قانونی قرار دینے اور مزدور سیاست پر پابندی کو مسترد کرتے ہیں؛ ریڈ ورکرز فرنٹ

کوئٹہ: بلوچستان بھر میں یونینز کو غیر قانونی قرار دینے اور مزدور سیاست پر پابندی کو مسترد کرتے ہیں؛ ریڈ ورکرز فرنٹ

|ریڈ ورکرز فرنٹ، بلوچستان| بلوچستان ہائی کورٹ نے 27 مئی کو  اپنے ایک متنازعہ فیصلے میں بلوچستان بھر کے سرکاری اداروں میں ٹریڈ یونینز کو غیر قانونی قرار دے دیا۔ یہ متنازعہ اور جانبدارانہ فیصلہ مذکورہ ہائی کورٹ نےپبلک ہیلتھ انجینئرنگ کی دو مزدور یونینز کی آپس کی لڑائی میں […]

July 29, 2019 ×
احتجاجی ملازمین کی ریلی شہر کی سڑکوں سے گزرتی ہوئی

کشمیر: ابھرتی مزدور تحریک

|تحریر: گلباز خان| عالمی معیشت ایک دہائی قبل شروع ہونے والے بحران سے ابھی تک نکل نہیں پائی ہے۔ معاشی بحالی کے امکانات کہیں بھی نظر نہیں آ رہے بلکہ ایک نئے اور زیادہ گہرے بحران کے لیے حالات تیار ہو رہے ہیں۔ ہر ملک معاشی عدم استحکام،سماجی بدحالی اور […]

April 27, 2019 ×
لاہور: ’’مزدور تحریک کو درپیش مسائل اور آگے بڑھنے کا لائحہ عمل‘‘ سیمینار کا انعقاد

لاہور: ’’مزدور تحریک کو درپیش مسائل اور آگے بڑھنے کا لائحہ عمل‘‘ سیمینار کا انعقاد

|رپورٹ: ریڈ ورکرز فرنٹ، لاہور| مہنگائی، بے روزگاری، نجکاری، اجرتوں میں کمی، ٹھیکیداری کے خلاف اعلان جنگ! ریڈ ورکرز فرنٹ لاہور اور ماہانہ ورکرنامہ کے زیر اہتمام ’’مزدور تحریک کو درپیش مسائل اور آگے بڑھنے کا لائحہ عمل‘‘ کے عنوان سے لاہور پریس کلب میں ایک سیمینار منعقد کیا گیا […]

March 7, 2019 ×
Miners pose for a photograph at the coal face inside a mine in Choa Saidan Shah, Punjab province, April 29, 2014. Workers at this mine in Choa Saidan Shah dig coal with pick axes, break it up and load it onto donkeys to be transported to the surface. Employed by private contractors, a team of four workers can dig about a ton of coal a day, for which they earn around $10 to be split between them. The coalmine is in the heart of Punjab, Pakistan's most populous and richest province, but the labourers mostly come from the poorer neighbouring region of Khyber Pakhtunkhwa. Picture taken April 29, 2014. REUTERS/Sara Farid (PAKISTAN - Tags: BUSINESS SOCIETY ENERGY TPX IMAGES OF THE DAY)

ATTENTION EDITORS: PICTURE 08 OF 24 FOR PACKAGE 'COAL MINING IN THE PUNJAB' 
TO FIND ALL IMAGES SEARCH 'FARID COAL'

انٹرویو: بلوچستان میں کوئلے کے محنت کشوں کی حالتِ زار

| رپورٹ: ریڈورکرزفرنٹ ،کوئٹہسال 2013ء کی ایک رپورٹ کے مطابق یہ کہا جاتا ہے کہ پاکستان میں 186 ارب ٹن کوئلے کے ذخائر موجود ہیں، لیکن زیادہ تر ناقص معیار کے ہیں۔ سندھ میں 185.5 ارب ٹن کے کوئلے کے سب سے بڑے ذخائر ہیں، اس کے بعد بلوچستان، جس […]

January 6, 2019 ×
کوئٹہ: محکمہ ڈاک کے محنت کشوں کی قلم چھوڑ ہڑتال

کوئٹہ: محکمہ ڈاک کے محنت کشوں کی قلم چھوڑ ہڑتال

رپورٹ: ریڈ ورکرز فرنٹ| محکمہ ڈاک بلوچستان سرکل کے محنت کش گزشتہ پانچ دنوں سے اپنے جائز مطالبات کے حق میں جی پی او آفس کے سبزہ زار میں قلم چھوڑ احتجاج پر بیٹھے ہوئے ہیں۔اس احتجاج کا بُنیادی مقصد محنت کشوں کے چھینے گئے حقوق  کی واپسی ہے۔ یہ […]

October 10, 2018 ×
ارجنٹائن: معاشی بحران کی شدت اور عام ہڑتال!

ارجنٹائن: معاشی بحران کی شدت اور عام ہڑتال!

|تحریر: جارج مارٹن، ترجمہ: زین العابدین| 25 ستمبر 2018ء کو ہونے والی عام ہڑتال نے ارجنٹائن کی معیشت کو مفلوج کر کے رکھ دیا۔محنت کش طبقے کی بہت بڑی طاقت کے مظاہرے میں ،پبلک ٹرانسپورٹ ،اسکول ،یونیورسٹیاں بند ہو کر رہ گئے، جبکہ اس دوران دوسرے ادارے، بینک بھی بند […]

September 30, 2018 ×
نیاپاکستان: لاکھوں افراد کو بیروزگار کرنے کا منصوبہ تیار!

نیاپاکستان: لاکھوں افراد کو بیروزگار کرنے کا منصوبہ تیار!

|رپورٹ: ریڈ ورکرز فرنٹ| نئے پاکستان کے ممکنہ وزیر خزانہ اسد عمر نے آج فنانشل ٹائمز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے اقتدار کے پہلے100 دنوں میں دو سو سرکاری اداروں کی نجکاری کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ اس کے مطابق حکومت میں آتے ہی وہ ایک ویلتھ […]

August 3, 2018 ×
میٹرو کیش اینڈ کیری انتظامیہ کی مزدور دشمنی اور غنڈہ گردی کا احوال 

میٹرو کیش اینڈ کیری انتظامیہ کی مزدور دشمنی اور غنڈہ گردی کا احوال 

|رپورٹ: نمائندہ ورکرنامہ| میٹرو کیش اینڈ کیری پاکستان، میٹرو گروپ جرمنی کا ایک ذیلی ادارہ ہے جو کہ سنہ 2006ء سے پاکستان میں کام کر رہا ہے اور2011ء سے اب تک مقامی حبیب گروپ کے ساتھ شراکت داری میں ہے۔ چند روز قبل میٹرو حبیب ورکرز یونین پاکستان کے جنرل […]

June 6, 2018 ×
اداریہ ورکرنامہ: لبرل ورلڈ آرڈر کی شکست!

اداریہ ورکرنامہ: لبرل ورلڈ آرڈر کی شکست!

مسئلہ کسی ایک ملک کی سیاسی پارٹی یا معاشی پالیسی کا نہیں بلکہ پورے نظام کا ہے۔ عالمی سطح پر موجود لبرل ورلڈ آرڈر کو شکست ہو چکی ہے اور وہ اپنی بقا کی لڑائی لڑ رہا ہے اور اس لڑائی میں کروڑوں انسانوں کی زندگیوں میں مسلسل زہر گھولتا جا ر ہا ہے

June 6, 2018 ×
پاکستان: بحرانوں کی دلدل

پاکستان: بحرانوں کی دلدل

|تحریر: پارس جان| پاکستان کا سماج ایک ایسا پریشر کُکر بنتا جا رہا ہے جو کسی بھی وقت ایک دھماکے کی صورت میں پھٹ سکتا ہے۔ یہاں کے دانشوروں کا سالہا سال تک سب سے مرغوب جملہ یہی رہا کہ ’یہاں کچھ نہیں ہو سکتا‘۔ اس مفروضے کو ثابت کرنے […]

May 15, 2018 ×